X

فیکٹ چیک: ناتھورام گوڈسے کو لے کر اکشے کمار کا فرضی بیان ہو رہا وائرل

  • By Vishvas News
  • Updated: December 7, 2019

نئی دہلی (وشواس ٹیم)۔ سوشل میڈیا پر ناتھورام گوڈسے کے بارے میں فلم اداکار اکشے کمار کے نام سے ایک بیان وائرل ہو رہا ہے۔ وائرل بیان میں اکشے کمار گوڈسے کے آخری بیان کو تاریخی کتابوں میں جوڑے جانے کی وکلات کر رہے ہیں۔

وشواس نیوز کی پڑتال میں یہ بیان فرضی نکلا۔ اکشے کمار نے ناتھو رام گوڈسے کے بارے میں ایسا کچھ بھی نہیں کہا ہے۔

کیا ہے وائرل پوسٹ میں

فیس بک صارف ٹنکو ایس بگھیل نے ایک پوسٹ شیئر کی جس پر اداکار اکشے کمارے کی تصیر کے ساتھ لکھا ہے، ’’میں یہ نہیں کہہ سکتا کہ گوڈسے کے ذریعہ کیا گیا گاندھی کا قتل کرنا صحیح ہے یا غلط لیکن اتنا ضرور کہوں گا کہ تاریخ کی کتابوں میں گوڈسے کو گاندھی کا قاتل پڑھانے کے ساتھ ساتھ گوڈسے کا آخری بیان بھی پڑھاؤ کہ اس نے آخر گاندھی کا قتل کیوں کیا تھا؟ باقی صحیح غلط کا فیصلہ یہ نوجوان خود کر لیں گے‘‘۔

پڑتال

اکشے کمارے کے نام سے وائرل ہو رہا یہ بیان فرضی ہے۔ پوسٹ میں اکشے کمار کی تصویر کے ساتھ ایک ٹویٹر ہینڈل کا ذکر ہے۔ ایٹ اکشے کمار_1 کے نام سے کئے گئے ٹویٹ میں گوڈسے کے بارے میں لکھا ہوا ہے۔ ٹویٹر کی جانب سے اس ہینڈل کو سسپینڈ کیا جا چکا ہے۔

اکشے کمار کا آفیشیئل ٹویٹر ہینڈل ’ایٹ اکشے کمار‘ کے نام سے ہے اور انہوں نے گوڈسے کے نام سے کوئی بھی ٹویٹ نہیں کیا ہے۔

اکشے کمار کا آفیشیئل ٹویٹر ہینڈل

دینک جاگرن کے ایڈیٹر (انٹرٹینمینٹ) پراگ چھاپیکر نے بتایا کہ عام طو رپر صارف ویری فائڈ اور ان ویری فائڈ ہینڈل کے بیچ کا فرق نہیں سمجھ پاتے ہیں اور اکثر فرضی خبروں کو پھیلانے والے اداکاروں کے نام سے تھوڑی تبدیلی کر فرضی پروفائل بناتے ہیں اور فرضی خبر پھیلانا شروع کر دیتے ہیں۔

اب باری تھی اس پوسٹ کو فرضی حوالے کے ساتھ وائرل کرنے والے فیس بک صارف کی سوشل اسکیننگ کرنے کی۔ ہم نے پایا کہ اس پروفائل سے ایک مخصوص آئڈیولاجی کی جانب متوجہ پوسٹ شیئر کی جاتی ہیں۔ علاوہ ازیں اس سے قبل بھی فرضی پوسٹ شیئر کی جا چکی ہیں۔

نتیجہ: اکشے کمار کے نام سے ناتھورام گوڈسے کو لے کر وائرل ہو رہا بیان فرضی ہے۔ وائرل بیان اکشے کمار کے نام سے بنے فرضی ٹویٹر ہینڈل سے کیا گیا تھا، جسے اب سسپینڈ کیا جا چکا ہے۔

  • Claim Review : میں یہ نہیں کہہ سکتا ہے کہ گوڈسے کے ذریعہ کیا گیا گاندھی کا قتل کرنا صحیح ہے یا غلط لیکن اتنا ضرور کہوں گا کہ تاریخ کی کتابوں میں گوڈسے کو گاندھی کا قاتل پڑھانے کے ساتھ ساتھ گوڈسے کا آخری بیان بھی پڑھاؤ کہ اس نے آخر گاندھی کا قتل کیوں کیا تھا؟ باقی صحیح غلط کا فیصلہ یہ نوجوان خود کر لیں گے‘‘۔
  • Claimed By : FB Page- Tinku S Baghel
  • Fact Check : جھوٹ‎
جھوٹ‎
    فرضی خبروں کی نوعیت کو بتانے والے علامت
  • سچ
  • گمراہ کن
  • جھوٹ‎

مکمل حقیقت جانیں... کسی معلومات یا افواہ پر شک ہو تو ہمیں بتائیں

سب کو بتائیں، سچ جاننا آپ کا حق ہے۔ اگر آپ کو ایسے کسی بھی میسج یا افواہ پر شبہ ہے جس کا اثر معاشرے، ملک یا آپ پر ہو سکتا ہے تو ہمیں بتائیں۔ آپ نیچے دئے گئے کسی بھی ذرائع ابلاغ کے ذریعہ معلومات بھیج سکتے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Post saved! You can read it later