X

فیکٹ چیک: گڑھے سے خاتون کو نکالنے کا ویڈیو پوپی کا نہیں، دہلی کا ہے

وشواس نیوز نے اپنی جانچ میں پتہ چلا کہ وائرل ویڈیو دہلی کا ہے۔ اس کا راجستھان اور اتر پردیش سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ ویڈیو ایک گمراہ کن دعوے کے ساتھ وائرل ہو رہا ہے۔

  • By Vishvas News
  • Updated: August 31, 2022

نئی دہلی (وشواس نیوز)۔ 30 سیکنڈ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے۔ اس میں ایک نوجوان خاتون مٹی کے گڑھے میں گر گئی ہے۔ کچھ نوجوان اسے وہاں سے نکال رہے ہیں۔ سڑکوں پر بھی پانی کھڑا نظر آرہا ہے۔ ویڈیو کو شیئر کرکے صارفین اسے راجستھان کے بھیلواڑہ اور اتر پردیش کے پریاگ راج کا بتا رہے ہیں۔

وشواس نیوز نے اپنی جانچ میں پتہ چلا کہ وائرل ویڈیو دہلی کا ہے۔ اس کا راجستھان اور اتر پردیش سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ ویڈیو ایک گمراہ کن دعوے کے ساتھ وائرل ہو رہا ہے۔

کیا ہے وائرل پوسٹ میں؟

ویڈیو شیئر کرتے ہوئے فیس بک صارف انوراگ سنگھ یادو نے لکھا، یہ کوئی دریا نہیں ہے، یہ اتر پردیش کے پریاگ راج ضلع کی ایک سڑک ہے۔

فیس بک صارف منوج کمار سونی پترکار (آرکائیو لنک) نے اس ویڈیو کو بھیلواڑہ کے طور پر پوسٹ کیا ہے۔

ٹویٹر صارف پرکاش راج (پیروڈی) (آرکائیو لنک) نے بھی ویڈیو پوسٹ کیا ہے اور اسے اتر پردیش کے پریاگ راج سے بتایا ہے۔

پڑتال

وائرل دعوے کی تحقیقات کے لیے ہم نے گوگل کے ان ویڈ ٹول کی مدد لی۔ گوگل ریورس امیج سے کی فریموں کو تلاش کرنے پر، ہمیں سمیت اگروال ٹویٹر اکاؤنٹ سے ایک ٹویٹ ملا۔ 27 اگست 2022 کو پوسٹ کرتے ہوئے یہ ویڈیو بیگم پور دہلی کا بتایا گیا تھا۔

راجستھان کے محکمہ اطلاعات اور تعلقات عامہ نے بھی 26 اگست کو ٹویٹ کر کے اس ویڈیو کو راجستھان سے نہیں بلکہ دہلی سے بلایا تھا۔

ویڈیو میں، ہم نے ملٹی اسپیشلٹی ہسپتال اور فیشن ورلڈ کے الفاظ دیکھے۔ جب ہم نے گوگل میپس پر فیشن ورلڈ بیگم پور دہلی کو تلاش کیا تو ہمیں یہ مقام ملا۔ یہ گوگل کے ’اسٹریٹ ویو‘ میں دیکھا جا سکتا ہے۔ قریب ہی ہیرا کا ملٹی اسپیشلٹی ہسپتال بھی ہے جس کا کچھ حصہ وائرل ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے۔

ہم نے اس کی تصدیق کے لیے ہیراج ملٹی اسپیشلٹی ہسپتال کو فون کیا۔ وہاں سے ڈاکٹر کپور نے بتایا، ‘وائرل ویڈیو بیگم پور بروالا روڈ دہلی ہی کا ہے۔ یہ واقعہ چار پانچ دن پہلے کا ہے۔

ہم نے فیس بک صارف انوراگ سنگھ یادو کا پروفائل سکین کیا، جس نے گمراہ کن دعوے کے ساتھ ویڈیو وائرل کیا۔ اس کے مطابق وہ لکھنؤ میں رہتے ہیں اور ایک سیاسی پارٹی سے متاثر ہیں۔

نتیجہ: وشواس نیوز نے اپنی جانچ میں پتہ چلا کہ وائرل ویڈیو دہلی کا ہے۔ اس کا راجستھان اور اتر پردیش سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ ویڈیو ایک گمراہ کن دعوے کے ساتھ وائرل ہو رہا ہے۔

  • Claim Review : یہ کوئی دریا نہیں ہے، یہ اتر پردیش کے پریاگ راج ضلع کی ایک سڑک ہے۔
  • Claimed By : انوراگ سنگھ
  • Fact Check : جھوٹ‎
جھوٹ‎
فرضی خبروں کی نوعیت کو بتانے والے علامت
  • سچ
  • گمراہ کن
  • جھوٹ‎

مکمل حقیقت جانیں... کسی معلومات یا افواہ پر شک ہو تو ہمیں بتائیں

سب کو بتائیں، سچ جاننا آپ کا حق ہے۔ اگر آپ کو ایسے کسی بھی میسج یا افواہ پر شبہ ہے جس کا اثر معاشرے، ملک یا آپ پر ہو سکتا ہے تو ہمیں بتائیں۔ آپ نیچے دئے گئے کسی بھی ذرائع ابلاغ کے ذریعہ معلومات بھیج سکتے ہیں۔

ٹیگز

اپنی راے دیں

No more pages to load

متعلقہ مضامین

Next pageNext pageNext page

Post saved! You can read it later