X

فیکٹ چیک: بہار میں ووٹنگ کے نام پر وائرل ہوئی آسام کی چھ سال پرانی تصویر

  • By Vishvas News
  • Updated: November 4, 2020

نئی دہلی (وشواس نیوز)۔ سوشل میڈیا پر ایک پتلے دبلے شخص کی ووٹ ڈالتے ہوئے تصویر وائرل ہو رہی ہے۔ دعوی کیا جا رہا ہے کہ یہ تصویر بہار انتخابات سے منسلک ہے۔

وشواس نیوز نے وائرل پوسٹ کی جانچ کی۔ ہمیں پتہ چلا کہ 2014 کی ایک تصویر اب بہار میں ووٹ ڈالنے کے نام سے وائرل کیا جا رہا ہے۔ اصل تصویر آسام کی ہے۔ اس کا بہار انتخابات سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

کیا ہے وائرل پوسٹ میں؟

فیس بک صارف مسعود الرحمان نے 29 اکتوبر کو ایک تصویر اپ لوڈ کرتے ہوئے دعوی کیا:’بہار میں نتیش راج کے 15 سال کی تقری کی جیتی جاگتی تصویر ووٹ ڈالتے ہوئے۔ یہ اسی امید سے آئے ہوں گے پولنگ بوتھ کاش کچھ تصویر بدلے جو یہ جھیل رہے ہیں ان کے بچوں کو نہ جھیلنا پڑے‘‘۔

پوسٹ کے آکائیو ورژن کو یہاں دیکھیں۔

پڑتال

وشواس نیوز نے سب سے پہلے وائرل ہو رہی ہے تصویر کو گوگل رورس امیج ٹول میں اپ لوڈ کر کے سرچ کیا۔ سرچ کے دوران ہمیں یہ تصویر جنجوار ڈاٹ کام کی ایک خبر میں ملی۔ اس تصویر کو لیکر خبر میں صرف اتنا بتایا گیا کہ یہ کوئی آدیواسی ہیں۔ خبر 19 نومبر 2019 کو شائع ہوئی تھی۔ یعنی صاف تھا کہ تصویر کا بہار انتخابات سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

پڑتال کے دوران ہمیں اصل تصویر ’دا ہندو‘ کی ویب سائٹ پر ملی۔ 13 اپریل 2014 کو شائع ہوئی خبر میں بتایا گیا کہ تصویر آسام کے کاربی آنگ لونگ ضلع کے تیوا برادری کے ایک شخص کی ہے۔ یہ شخص اپنا ووٹ ڈالنے آیا تھا۔ اس تصویر کو ریتو راج کنور نام کے فوٹو گرافر نے کھینچا تھا۔ مکمل خبر یہاں پڑھ سکتے ہیں۔

پڑتال کے اگلے مرحلہ میں وشواس نیوز نے ریتو راج کنور سے رابطہ کیا۔ انہوں نے ہمیں بتایا کہ وہ کبھی بہار گئے بھی نہیں ہیں، پھر بھی لوگ ان کی پرانی تصویر کو وائرل کر رہے ہیں۔

پوسٹ کو فرضی دعوی کے ساتھ شیئر کرنے والے فیس بک صارف ’مسعود الرحمان‘کی سوشل اسکیننگ میں ہم نے پایا کہ صارف کا تعلق حیدرآباد سے ہے۔

نتیجہ: وشواس نیوز کی پڑتال میں وائرل پوسٹ فرضی ثابت ہوئی۔ آسام کی چھ سال پرانی تصویر کو اب کچھ لوگ بہار کی بتا کر وائرل کر رہے ہیں۔

  • Claim Review : دعوی کیا جا رہا ہے کہ یہ تصویر بہار انتخابات سے منسلک ہے۔
  • Claimed By : Masoodur Rahman
  • Fact Check : جھوٹ‎
جھوٹ‎
    فرضی خبروں کی نوعیت کو بتانے والے علامت
  • سچ
  • گمراہ کن
  • جھوٹ‎

مکمل حقیقت جانیں... کسی معلومات یا افواہ پر شک ہو تو ہمیں بتائیں

سب کو بتائیں، سچ جاننا آپ کا حق ہے۔ اگر آپ کو ایسے کسی بھی میسج یا افواہ پر شبہ ہے جس کا اثر معاشرے، ملک یا آپ پر ہو سکتا ہے تو ہمیں بتائیں۔ آپ نیچے دئے گئے کسی بھی ذرائع ابلاغ کے ذریعہ معلومات بھیج سکتے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Post saved! You can read it later