X

فیکٹ چیک: سر پر پتھر اٹھائے تصویر میں نظر آرہی خاتون نہیں ہے پی ایس آئی پدمشیلہ ترپوڈے

  • By Vishvas News
  • Updated: November 5, 2020

نئی دہلی (وشواس نیوز)۔ سوشل میڈیا پر ایک تصویر وائرل ہو رہی ہے، جس میں ایک خاتون سر پر پتھر اٹھائے اور گود میں بچے کو لئے کھڑی ہے، جبکہ اس کے ساتھ ہی دوسری تصویر لگائی گئی ہے، جس میں ایک خاتون پولیس کی وردی میں نظر آرہی ہے۔ وائرل پوسٹ کے ساتھ دعوی کیا جا رہا ہے کہ یہ خاتون پدمشیلہ ترپوڈے ہے، جنہوں نے شوہر کے گھر کی حالات خراب ہونے کے سبب پتھر کے سل بٹے بیچ کر گزارا کیا، پھر انہوں نے پڑھائی کر مہاراشٹرا ریاستی پی ایس سی میں پی ایس آئی کا امتحان پاس کیا اور وہ سب انسپیکٹر بن گئیں۔

وشواس نیوز نے اپنی پڑتال میں پایا کہ یہ تصویر میں سر پر پتھر اٹھائے نظر آرہی خاتون پدمشیلہ ترپوڑے نہیں ہے۔ علاوہ ازیں ترپوڈے نے نہیں کبھی پتھر کے سل بٹے بیچنے کا کام نہیں کیا۔

کیا ہے وائرل پوسٹ میں؟

فیس بک پر یہ پوسٹ ’بولاکی ورما‘ نام کے صارف نے شیئر کی ہے۔ تصویر کے ساتھ کیپش میں لکھا ہے، ’’وہ ضلع بھنڈارہ کی رہائشی ہے اور اس نے محبت کی شادی کی ہے۔ اپنے شوہر کے گھر کے حالات خراب ہونے کی وجہ سے ، اس نے پتھر کے سل بٹے بیچے اور بچے کی دیکھ بھال کرتے ہوئے، یشونت راؤ چہوان اوپن یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کر اس نے مہاراشٹرا اسٹیٹ پی ایس سی میں، پی ایس آئی کا امتحان پاس کیا ہے۔ وہ بدھ خاندان سے ہے۔ ہم ان کی محنت کو سلام پیش کرتے ہیں‘‘۔

پڑتال

وشواس نیوز نے وائرل پوسٹ کی پڑتال کے لئے ایک دعوی کو چیک کیا۔

خاتون کا نام پدم شیلا پرپوڈے ہے۔

وشواس نیوز نے پایا کہ وائرل تصویر میں پولیس کی وردی میں دکھائی دینے والی خاتون پدمشیلہ ترپوڑے ہیں۔ ان کا نام ان کی وردی کے بیج پر بھی پڑھا جاسکتا ہے، حالاںکہ سر پر سل بٹے اٹھائے اور گود میں بچے کو لئے کھڑی خاتون بدمشیلہ نہیں ہے۔ وشواس نیوز نے پدمشیلہ سے رابطہ کیا۔ انہوں نے تصدیق کی کہ اس کی گود میں بچے کے ساتھ عورت کی تصویر نہیں ہے۔ ہم کام کرنے والی عورت کی شناخت نہیں کرسکے۔

وہ بھنڈارا ضلع کی رہائیشی ہیں اور انہوں نے محبت کی شادی کی ہے۔

پدمشیلہ نے ہی تصدیق کی کہ یہ دونوں ہی حقائق صحیح ہیں۔

شوہر کے گھر کے حالات خراب ہونے کی وجہ سے انہیں کھلبتا اور پتھر کے سل بٹے بیچنے پڑے

پدمشیلہ نے ہمیں بتایا کہ شوہر کے گھر میں معاشی تنگی تھی، لیکن انہوں نے کبھی بھی یہ کام نہیں لئے، وہ ہاؤز وائف ہی تھیں۔

بچے کو سنبھالتے وقت ، انہوں نے یشونت راؤ چہوان اوپن یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی اور مہاراشٹر اسٹیٹ پی ایس سی میں پی ایس آئی کا امتحان پاس کیا۔

پدمشیلہ نے بتایا کہ اپنے دو بچوں کی پیدائش کے بعد، انہوں نے گریجویشن مکمل کی اور پھر کامپیٹیٹیو امتحان کی تیاری کر کے پی ایس آئی کا امتحان پاس کیا۔

وہ بودھ خاندان سے تعلق رکھتی ہیں۔

یہ دعوی صحیح ہے کہ پدمشیلہ بودھ خاندان سے آتی ہیں۔ انہوں نے خود اس بات کی تصدیق کی۔

وشواس نیوز نے بات کرتے ہوئے پدمشیلہ ترپوڈے نے بتایا کہ وائرل پوسٹ تقریبا تین سال پہلے بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی۔ تب بھی انہوں نے صاف کیا تھا کہ سر پر پتھر اٹھائے نظر آرہی خاتون کی تصویر ان کی نہیں ہے اور نہ ہی انہوں نے مزدوری کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس وقت وہ ناگپور میں پوسٹیڈ ہیں۔

پوسٹ کو گمراہ کن دعوی کے ساتھ شیئر کرنے والے فیس بک صارف بولاکی ورما کی سوشل اسکینگ میں ہم نے پایا کہ صارف کا تعلق رائے پور سے ہے۔

نتیجہ: وائرل پوسٹ میں مزدور خاتون کی تصویر پدمشیلہ ترپوڑے کی نہیں ہے۔ پدمشیلہ کے مطابق، انہوں نے کبھی مزدوری نہیں کی ہے، وائرل کی جا رہی پوسٹ گمراہ کن ہے۔

  • Claim Review : دعوی کیا جا رہا ہے کہ یہ خاتون پدم شیلا پرپوڈے ہے، جنہوں نے شوہر کے گھر کی حالات خراب ہونے کے سبب کھل بتا اور پتھر کے سل بٹے بیچ کر گزارا کیا، پھر انہوں نے پڑھائی کر مہاراشٹرا ریاستی پی ایس سی میں پی ایس آئی کا امتحان پاس کیا اور وہ سب انسپیکٹر بن گئیں۔
  • Claimed By : Bulaki Verma
  • Fact Check : گمراہ کن
گمراہ کن
    فرضی خبروں کی نوعیت کو بتانے والے علامت
  • سچ
  • گمراہ کن
  • جھوٹ‎

مکمل حقیقت جانیں... کسی معلومات یا افواہ پر شک ہو تو ہمیں بتائیں

سب کو بتائیں، سچ جاننا آپ کا حق ہے۔ اگر آپ کو ایسے کسی بھی میسج یا افواہ پر شبہ ہے جس کا اثر معاشرے، ملک یا آپ پر ہو سکتا ہے تو ہمیں بتائیں۔ آپ نیچے دئے گئے کسی بھی ذرائع ابلاغ کے ذریعہ معلومات بھیج سکتے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Post saved! You can read it later