X

فیکٹ چیک: یہ تصویر نہیں ہے کسی بھی مذہبی کتاب کی، وائرل پوسٹ کے ساتھ کیا جا رہا دعوی بالکل فرضی ہے

اس پوسٹ کی پڑتال کی تو پایا کہ یہ دعوی فرضی ہے۔ وائرل تصویر میں نظر آرہی کتاب نا ہی قرآن شریف ہے اور نا ہی کوئی دیگر مذہبی کتاب۔ بلکہ یہ ایک ڈکشنری ہے جس پر فنکار کے ذریعہ کرسٹل کا کام کیا ہے۔

  • By Vishvas News
  • Updated: July 1, 2022

نئی دہلی (وشواس نیوز)۔ سوشل میڈیا پر ایک کتاب کی تصویر وائرل ہو رہی ہے جس کو شیئر کرتے ہوئے صارفین یہ دعوی کر رہے ہیں کہ یہ تصویر قرآن شریف کی ہے جو سمندر کی گہرائیوں میں برسوں سے تھا لیکن ابھی بھی ویسے کا ویسا ہی ہے۔ جب ہم نے اس پوسٹ کی پڑتال کی تو پایا کہ یہ دعوی فرضی ہے۔ وائرل تصویر میں نظر آرہی کتاب نا ہی قرآن شریف ہے اور نا ہی کوئی دیگر مذہبی کتاب۔ بلکہ یہ ایک ڈکشنری ہے جس پر فنکار کے ذریعہ کرسٹل کا کام کیا ہے۔

کیا ہے وائرل پوسٹ میں؟

فیس بک صارف نے وائرل پوسٹ کو شیئر کرتے ہوئے لکھا، ’یہ قرآن ایک گہرے سمندر میں ملا تھا۔ یہ کئی سالوں سے پانی میں ہے لیکن ویسا ہی برقرار ہے‘‘۔

پوسٹ کے آرکائیو ورژن کو یہاں دیکھیں۔

پڑتال

اپنی پڑتال کو شروع کرتے ہوئے سب سے پہلے ہم نے گوگل رورس امیج کے ذریعہ وائرل تصویر کو سرچ کیا۔ سرچ میں ہمیں یہ تصویر ’اسٹف یو کانٹ ہیو‘ نام کے ایک بلاگ میں ملی۔ یہ بلاگ فنکار کیتھرین میک اویر کا ہے۔ وہیں تصویر کے ساتھ دی گئی معلومات کے مطابق کرسٹالائزڈ جرمن انگریزی کی ڈکشنری ہے۔ وہیں اس بلاگ میں اس کرسٹلائزڈ ڈکشنری کو بنانے کا فارمولا بھی لکھا ہوا نظر آیا۔

مزید تصدیق کے لئے ہم نے فنکار کیتھرین میک اوور سے ای میل کے ذریعہ رابطہ کیا اور وائرل پوسٹ ان کے ساتھ شیئر کی ۔ انہوں نے ہمیں معلومات دیتے ہوئے بتایا کہ،’ جی ہاں، یہ تصویر میرے بلاگ کی ہے، یہ ایک جرمن-امریکی لغت ہے جسے میں نے 20 میول ٹیم بوروکس کا استعمال کرتے ہوئے کرسٹلائزڈ تھرفٹ اسٹور سے خریدا تھا، جو کہ ایک کلینگ ایجنٹ ہے جو امریکہ میں کسی بھی سپر مارکیٹ میں پایا جا سکتا ہے۔ میں ٹیکسٹائل اور میکڈ میڈیا میں کام کرنے والی ایک فنکار ہوں، اور یہ میرے پیسز میں سے ایک ہے۔ یہ تقریباً پانچ سال قبل گیلری میں ایک ہم کپل کو فروخت کیا گیا تھا۔ لوگوں نے اس تصویر کے بارے میں جھوٹی کہانی بنائی ہوئی ہے اور یہ کافی سالوں سے وائرل ہے۔

فرضی پوسٹ کو شیئر کرنے والے فیس بک صارف کی سوشل اسکیننگ میں ہم نے پایا کہ صارف کا تعلق پاکستان سے ہے۔

نتیجہ: اس پوسٹ کی پڑتال کی تو پایا کہ یہ دعوی فرضی ہے۔ وائرل تصویر میں نظر آرہی کتاب نا ہی قرآن شریف ہے اور نا ہی کوئی دیگر مذہبی کتاب۔ بلکہ یہ ایک ڈکشنری ہے جس پر فنکار کے ذریعہ کرسٹل کا کام کیا ہے۔

  • Claim Review : یہ قرآن ایک گہرے سمندر میں ملا تھا۔ یہ کئی سالوں سے پانی میں ہے لیکن ویسا ہی برقرار ہے
  • Claimed By : Muhammad Umar Khan
  • Fact Check : جھوٹ‎
جھوٹ‎
فرضی خبروں کی نوعیت کو بتانے والے علامت
  • سچ
  • گمراہ کن
  • جھوٹ‎

مکمل حقیقت جانیں... کسی معلومات یا افواہ پر شک ہو تو ہمیں بتائیں

سب کو بتائیں، سچ جاننا آپ کا حق ہے۔ اگر آپ کو ایسے کسی بھی میسج یا افواہ پر شبہ ہے جس کا اثر معاشرے، ملک یا آپ پر ہو سکتا ہے تو ہمیں بتائیں۔ آپ نیچے دئے گئے کسی بھی ذرائع ابلاغ کے ذریعہ معلومات بھیج سکتے ہیں۔

ٹیگز

اپنی راے دیں
مزید پڑھ

No more pages to load

متعلقہ مضامین

Next pageNext pageNext page

Post saved! You can read it later