X

فیکٹ چیک: آج تک نیوز چینل کے نام پر وائرل ہوا فیک ٹویٹ

وشواس نیوز نے وائرل پوسٹ کی جانچ کی۔ وائرل پوسٹ فرضی نکلی۔ آج تک نیوز چینل کی جانب سے ایسی کوئی ٹویٹ نہیں کی گئی ہے۔ اس میں ایڈیٹنگ کی گئی ہے۔ وشواس نیوز اس سے پہلے بھی اس کی ایک بار جانچ کر چکا ہے۔

  • By Vishvas News
  • Updated: July 12, 2022

نئی دہلی (وشواس نیوز)۔ نیوز چینل آج تک کے نام سے ایک ٹویٹ کا اسکرین شاٹ سوشل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارمز پر وائرل ہو رہا ہے۔ اسے سچ مانتے ہوئے سوشل میڈیا صارفین اسے وائرل کر رہے ہیں۔ پوسٹ کے ساتھ دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ سی بی آئی گاندھی خاندان کے خلاف بدعنوانی کے ثبوت تلاش کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکی ہے۔ بی جے پی نے عدالت میں گاندھی خاندان سے معافی مانگ لی ہے۔ وشواس نیوز نے وائرل پوسٹ کی جانچ کی۔ وائرل پوسٹ فرضی نکلی۔ آج تک نیوز چینل کی جانب سے ایسی کوئی ٹویٹ نہیں کی گئی ہے۔ اس میں ایڈیٹنگ کی گئی ہے۔ وشواس نیوز اس سے پہلے بھی اس کی ایک بار جانچ کر چکا ہے۔ فیکٹ چیک یہاں پڑھیں۔

کیا ہے وائرل پوسٹ میں؟

فیس بک پیج روشنی کشال جیسوال نے 11 جولائی کو ایک نیوز چینل کا جعلی اسکرین شاٹ پوسٹ کیا، لکھا: ‘مافیویر کی اولاد دوبارہ معافی مانگتی ہے۔

اسکرین شاٹ میں آج تک کے حوالے سے کہا گیا کہ سی بی آئی کو گاندھی خاندان کے خلاف بدعنوانی کا ایک بھی ثبوت نہیں مل سکا، بی جے پی نے عدالت میں گاندھی خاندان سے معافی مانگ لی۔

فیکٹ چیک کے مقصد سے پوسٹ میں جو چیزیں لکھی گئی ہیں ان کو یہاں پیش کیا گیا ہے۔ اس پوسٹ کا آرکائیو ورژن یہاں کلک کر کے دیکھا جا سکتا ہے۔ بہت سے دوسرے صارفین نے بھی اسے مختلف سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر ایک جیسے اور اسی طرح کے دعووں کے ساتھ شیئر کیا ہے۔

پڑتال

وشواس نیوز نے وائرل پوسٹ کی سچائی جاننے کے لیے سب سے پہلے گوگل سرچ کا استعمال کیا۔ متعلقہ مطلوبہ الفاظ کے ساتھ تلاش کرتے ہوئے، ہمیں ایک بھی رپورٹ نہیں ملی جس نے وائرل ٹویٹ میں کیے گئے دعووں کی تصدیق کی ہو۔ اس کے ساتھ ہی اگر گاندھی خاندان سے متعلق سی بی آئی کی ایسی کوئی خبر ہوتی تو میڈیا میں ضرور آتی۔ تلاش کے دوران ہمیں کئی ویب سائٹس پر ایسی خبریں ملی، جن میں اس ٹویٹ کو جعلی بتایا گیا تھا۔ تحقیقات کے دوران پتہ چلا کہ یہ ٹویٹ پہلے بھی کئی بار وائرل ہو چکا ہے۔

تلاش کے دوران ہمیں آج تک کے فیس بک پیج پر ایک پوسٹ ملی۔ وائرل اسکرین شاٹ کو جعلی قرار دیتے ہوئے لکھا گیا کہ آج تک کے ٹویٹ کے نام سے اس جعلی ٹویٹ کی تصویر کو گردش میں ہے۔ آج تک کی پوسٹ یہاں دیکھیں۔

تحقیقات کو جاری رکھتے ہوئے وشواس نیوز نے آج تک ویب سائٹ کے سینئر ایڈیٹر سے رابطہ کیا۔ انہوں نے واضح کیا کہ یہ پوسٹ پہلے بھی کئی بار وائرل ہو چکی ہے۔ اس میں کوئی صداقت نہیں۔

اب فرضی پوسٹ شیئر کرنے والے صارف کی تحقیقات کی باری تھی۔ فیس بک صارف روشن جیسوال کے اس پیج کو 3.49 لاکھ لوگ فالو کرتے ہیں۔ صارف ایک سیاست دان ہے۔

نتیجہ: وشواس نیوز نے وائرل پوسٹ کی جانچ کی۔ وائرل پوسٹ فرضی نکلی۔ آج تک نیوز چینل کی جانب سے ایسی کوئی ٹویٹ نہیں کی گئی ہے۔ اس میں ایڈیٹنگ کی گئی ہے۔ وشواس نیوز اس سے پہلے بھی اس کی ایک بار جانچ کر چکا ہے۔

  • Claim Review : مافیویر کی اولاد دوبارہ معافی مانگتی ہے۔
  • Claimed By : کشال جیسوال
  • Fact Check : جھوٹ‎
جھوٹ‎
فرضی خبروں کی نوعیت کو بتانے والے علامت
  • سچ
  • گمراہ کن
  • جھوٹ‎

مکمل حقیقت جانیں... کسی معلومات یا افواہ پر شک ہو تو ہمیں بتائیں

سب کو بتائیں، سچ جاننا آپ کا حق ہے۔ اگر آپ کو ایسے کسی بھی میسج یا افواہ پر شبہ ہے جس کا اثر معاشرے، ملک یا آپ پر ہو سکتا ہے تو ہمیں بتائیں۔ آپ نیچے دئے گئے کسی بھی ذرائع ابلاغ کے ذریعہ معلومات بھیج سکتے ہیں۔

ٹیگز

اپنی راے دیں
مزید پڑھ

No more pages to load

متعلقہ مضامین

Next pageNext pageNext page

Post saved! You can read it later