X

فیکٹ چیک: نیتا امبانی کا نہیں ہے کوئی ٹویٹر اکاؤنٹ، فرضی پوسٹ ہو رہی وائرل

  • By Vishvas News
  • Updated: May 28, 2020

نئی دہلی (وشواس نیوز)۔ سوشل میڈیا پر نیتا امبانی کے نام پر کئی فرضی پوسٹ وائرل ہوتی رہتی ہیں۔ اب ایک اور ایسی پوسٹ فیس بک، ٹویٹر پر گھوم رہی ہے۔ اس میں دعوی کیا جا رہا ہے کہ نیتا امبانی نے مسلمانوں کو ٹارگیٹ کرتے ہوئے اذان پر سوال اٹھایا ہے۔

وشواس نیوز نے انکشاف کیا ہے کہ وائرل پوسٹ غلط تھی۔ نیتا امبانی کے پاس سوشل میڈیا اکاؤنٹ نہیں ہے۔

کیا ہے وائرل پوسٹ میں؟

فیس بک صارف’ وشال کشواہا‘ نے ایک پوسٹ شیئر کی جس پر نیتا امبانی کی تصویر بنی ہوئی تھی اس ساتھ ٹویٹ کے طور پر لکھا تھا، ’’ایک جماعت 52 سیکنڈ کا قومی ترانہ نہیں سن سکتی…! اور وہ چاہتا ہے کہ ہم ایک دن میں 5 سے 3 منٹ تک اس کی مدھر آواز سنیں‘‘۔

پڑتال

وشواس نیوز نے گوگل سرچ کے ذریعے اپنی تفتیش کی۔ گوگل میں ہم نے نیتا امبانی کے وائرل ہو رہے مبینہ ٹویٹ سے متعلق خبروں کی تلاش شروع کیا۔ ہمیں کہیں بھی ایسی خبر نہیں ملی جس میں نیتا امبانی کے مبینہ ٹویٹ کے بارے میں کچھ کہا گیا ہو۔

اس کے بعد ہم نے وائرل پوسٹ میں دکھائے جانے والے ٹویٹر ہینڈل @ 0 نیتا_ جی کو اسکین کیا۔ ہمیں معلوم ہوا کہ یہ نیتا امبانی کے نام پر بنایا گیا ایک مداح اکاؤنٹ ہے۔ اس پر فرقہ واریت پھیلانے کے علاوہ ، کانگریس کو نشانہ بنانے والے ٹویٹس زیادہ ملے۔ اس ہینڈل کا نیتا امبانی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

تفتیش کے اگلے مرحلے میں ، ہم نے ریلائنس کمپنی کے تعلقات عامہ کے افسر سے رابطہ کیا۔ انہوں نے ہمیں واضح کیا کہ امبانی خاندان کا کوئی فرد بھی سوشل میڈیا پر نہیں ہے۔ ان سے وابستہ تمام اکاؤنٹس جعلی ہیں۔

اب باری تھی اس فرضی پوسٹ کو شیئر کرنے والے فیس بک صارف ’اشوک کشواہا‘ کی سوشل اسکیننگ کرنے کی۔ ہم نے پایا کہ اس پروفائل سے ایک مخصوص آئڈیولاجی کی جانب متوجہ پوسٹ کو شیئر کیا جاتا ہے۔


نتیجہ: وشواس نیوز کی چھان بین میں انکشاف ہوا ہے کہ نیتا امبانی کے نام پر وائرل ٹویٹ فرضی ہے۔ ان کا کوئی سوشل میڈیا اکاؤنٹ نہیں ہے۔

  • Claim Review : ایک جماعت 52 سیکنڈ کا قومی ترانہ نہیں سن سکتی…! اور وہ چاہتا ہے کہ ہم ایک دن میں 5 سے 3 منٹ تک اس کی مدھر آواز سنیں‘‘۔
  • Claimed By : FB User- Ashok Kushwaha
  • Fact Check : جھوٹ‎
جھوٹ‎
    فرضی خبروں کی نوعیت کو بتانے والے علامت
  • سچ
  • گمراہ کن
  • جھوٹ‎

مکمل حقیقت جانیں... کسی معلومات یا افواہ پر شک ہو تو ہمیں بتائیں

سب کو بتائیں، سچ جاننا آپ کا حق ہے۔ اگر آپ کو ایسے کسی بھی میسج یا افواہ پر شبہ ہے جس کا اثر معاشرے، ملک یا آپ پر ہو سکتا ہے تو ہمیں بتائیں۔ آپ نیچے دئے گئے کسی بھی ذرائع ابلاغ کے ذریعہ معلومات بھیج سکتے ہیں۔

جانیں سچی اور فرضی خبروں کی حقیقت کوئز کھیلیں اور خبروں کی حقیقت چیک کرنے کا طریقہ سیکھیں

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Post saved! You can read it later